ہفتہ، 13 جولائی، 2019

مختصر تعارف کتاب دفاع اہل السنۃ والجماعۃ جلد اول

مختصر تعارف کتاب دفاع اہل السنۃ والجماعۃ جلد اول
اس کتاب کا بنیادی مقصد اہل بدعت کے طرف سے اہل سنت پر ہونے والے تمام اعتراضات کے جوابات دینا ہے اس سلسلے میں مندرجہ ذیل کتب کو اعتراضات کیلئے ماخذ بنایا گیا:

الکوکبۃ الشہابیہ ،سبحان السبوح ،باطل اپنے آئینہ میں ، الحق المبین ،شمشیر حسینی ،دیوبند سے بریلی ، دعوت فکر ، محاسبہ دیوبندیت ، دیوبندی مذہب
لیکن مولوی کاشف اقبال صاحب بریلوی نے چونکہ اپنے کتاب "" دیوبندیت کے بطلان کا انکشاف "" میں تمام اہم اعتراضات کو ابواب کی شکل میں جمع کردیا تھا اس لئے اس کتاب کا بنیادی ماخذ کا درجہ دیا گیا
پہلی جلد 994 صفحات پر مشتمل ہے اس میں دیوبندیت کے بطلان کے کل 278 صفحات میں سے صرف 96 صفحات کا جواب دیا جاسکا جس سے آپ اندازہ لگاسکتے ہیں کہ کس قدر تفصیلی کام ہورہا ہے عبارات اکابر پر اس طرح کا کاکام اس سے پہلے تاریخ میں نہیں ہوا کتاب کی استنادی حیثیت کیلئے اتنا کافی ہے کہ اس پر پاک و ہند کے جید اساطین علم کی تقاریظ ثبت ہیں
کتاب منگوانے کیلئے آپ 03129880001 پر کال یا میسیج کرسکتے ہیں کتاب کا ہدیہ 500 جبکہ ڈاک خرچہ 200 کے اندر اندر ہے اس کے علاوہ لاہور دارالکتب غزنی سٹریٹ اردو بازار پر بھی دستیاب ہے
استاذ محترم کی طرف سے کتاب کی پہلی جلد میں یہ اعلان بھی کیا گیا کہ آپ کے ذہن میں علمایئے اہلسنت کے متعلق کسی بھی قسم کا اعتراض ہو ہمیں بھیجیں ہم ان شاء اللہ جواب کی پوری کوشش کریں گے
پہلی جلد میں مدرجہ ذیل اعتراضات کے جوابات ہیں
باب اول
دیوبندی بریلوی اختلافات تاریخی حقائق
باب دوم
علمائے دیوبند اللہ کے گستاخ ہیں معاذاللہ
باب سوم
علمائے دیوبند معاذاللہ گستاخان رسول ہیں
علمائے دیوبند کے تراجم پر اعتراضات
مرثیہ گنگوہی پر اعتراضات
پہلی جلد میں کل 100 اعتراضات کے جوابات دئے گئے ہیں
اگر آب یا آپ کے دوست ساتھی رشتہ دار کے ذہن میں علمایے دیوبند کے متعلق کسی بھی قسم کا کوئ اعتراض ہیں تو ایک دفعہ اس کتاب کا مطالعہ ضرور کرلیں ان شاء اللہ تشفی ہوجائے گی
اب علمائے بریلوی کی طرف سے علمائے حق پر اعتراضات کیلئے کسی مناظر یا عالم کے پاس جانے کی ضرورت نہیں بلکہ گھر بیٹھے اس کتاب کا مطالعہ کرکے فہرست سے مطلوبہ اعتراض نکال کر اس کے جواب کو پڑھ کر دل کو مطمئن کرسکتے ہیں
جزاکم اللہ اخوکم فی اللہ
محمد اسد
یکے از خادمان استاذ محترم حضرت مولانا ساجد خان صاحب نقشبندی حفظہ اللہ

0 تبصرے:

اگر ممکن ہے تو اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

نوٹ: اس بلاگ کا صرف ممبر ہی تبصرہ شائع کرسکتا ہے۔